سپیکر کے فیصلے سے ضمیر کا سودا کرنے والوں کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے ۔الیاس صدیقی

گلگت ( ایم ڈبلیو ایم میڈیا سیل) سپیکر کا فیصلہ ہمارے لئے غیر متوقع نہیں کیونکہ کاچو امتیاز کے ضمیر کے سودا میں خود صوبائی حکومت کا ہاتھ ہے۔ایک خیانت کار کو ریلیف دیکر سپیکر نے اپنے ایمان کا سودا کیا ہے۔
مجلس وحدت مسلمین کے گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے کہا ہے کہ سپیکر کے فیصلے سے ضمیر کا سودا کرنے والوں کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے ۔کاچو امتیاز نے اپنے ہاتھ سے لکھے ہوئے استعفیٰ میں واضح طور پر سپیکر سے گزارش کی ہے کہ میری اسمبلی رکنیت سے استعفیٰ قبول کی جائے جو سپیکر کو نظر نہیں آتا اور الفاظ کے ہیر پھیر سے اپنے حق میں دلیل قائم کرنے سے اندازہ ہوتا ہے کہ سپیکر صاحب سخت دباؤ کا شکار رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم نے کاچو امتیاز کے جانب سے مجلس کا ٹکٹ لیتے وقت جمع کرایا ہوا حلف نامہ بھی سپیکر کو پیش کیا تھا جس میں انہوں نے اللہ تعالیٰ کو حاضر و ناظر جان حضرت حجت کی بارگاہ میں اقرار کیا ہے کہ پارٹی پالیسی کی خلاف ورزی کی صورت میں پارٹی کو یہ اختیار حاصل ہوگا کہ وہ میری بنیادی رکنیت ختم کرکے اسمبلی رکنیت ختم کرواسکے۔اس کے علاوہ ہم نے سپیکر کو وہ ویڈیو ریکارڈنگ بھی پیش کی جس میں کاچو امتیاز نے کہا ہے کہ میں نے یہ استعفیٰ اپنی پارٹی قیادت کو جمع کروایا ہے اور پارٹی کا فیصلہ میرے لئے قابل قبول ہوگا۔ان تمام شواہد کی موجودگی کے باوجود ایک لفظ سے اپنا مطلب نکالنا اور ایک قومی مجرم کی پشت پناہی کرکے سپیکر نے تمام اخلاقی حدوں کو عبور کردیا ہے اور ایم ڈبلیو ایم کی دشمنی میں دین اسلام کا پیش کردہ قول و قرار کے عالمگیر اصول کی دھجیاں بکھیر دی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایک ناسور جو ہماری جماعت میں داخل ہوا تھا ہم نے اسے کاٹ کر پھینک دیا ہے اور یہی ہماری فتح ہے جبکہ سپیکر نے اس کی اسمبلی رکنیت بحال رکھ کر لوٹا کریسی کو فروغ دیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کاچو امتیاز کی اسمبلی رکنیت کے بحالی کے فیصلے سے پیپلز پارٹی کی جانب سے خوشی کے اظہار سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ بھی اس سارے کھیل کا حصہ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سپیکر کے فیصلے کے خلاف اور کاچو امتیاز کی اسمبلی رکنیت کی منسوخی کیلئے اعلیٰ عدالتوں سے رجوع کیا جائیگا۔

About مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے

One comment

  1. Propecia Orkut Proscar Buy Kamagra Jelly Uk cialis price Dapoxetina Generico Low Cost Ciprofloxacin Information Viagra Tarif Pharmacie

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.