ترک حکومت کا اقدام پیٹھ میں چھرا گھونپنے کے مترادف ہے،روس اس قسم کے جرائم کو ہرگز برداشت نہیں کرے گا۔روسی صدر

گلگت (ایم ڈبلیو ایم میڈیا سیل )امریکی صدر باراک اوبامہ نے ترکی کے ہم منصب رجب طیب اردگان کو روس کے ساتھ تناؤ بڑھانے سے منع کیا ہے۔پریس ٹیلویژن کے مطابق وائٹ ہاؤس سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ بدھ25 نو مبر کو باراک اوبامہ نے ترکی کے صدر اردگان سے ٹیلیفونک رابطہ کیا ہے ۔باراک اوبامہ نے اردگان کو متنبہ کیا ہے کہ وہ روس کے ساتھ محاذ آرائی سے پرہیز کرے ۔یاد رہے کہ گزشتہ روز داعش کے خلاف برسرپیکار روسی فوج کا ایک طیارہ ترکی نے مار گرایا تھا جس کے بعد روس اور ترکی کے تعلقات کشیدہ ہوچکے ہیں۔ادھرترک افواج کی جانب سے روسی طیارہ مار گرانے کے فوری بعد فرانس نے بھی ترکی کی فوجی امداد سے ہاتھ کھینچ لیا ہے۔روس کے صدر ولادمن پیوٹن نے ترکی کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ روسی طیارہ ایک کلومیٹر شام کے اندر محو پرواز تھاجسے ترک افواج نے نشانہ بنایا ہے اور ان کا یہ اقدام پیٹھ میں چھرا گھونپنے کے مترادف ہے۔روسی صدر نے نیٹو کے ممبر ممالک کو ممکنہ نتائج سے خبر دار کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس طرح کے جرائم ہرگز برداشت نہیں کرینگے۔اس واقعے کے بعد روس نے شام کو ایس 400 دفاعی میزائل سسٹم سے لیس کرنے کا فیصلہ کیا ہے جو روس کا جدید ترین دفاعی میزائل سسٹم ہے جو 400 کلومیٹر کے اندر کسی بھی کسی بھی فضائی حملے کو تباہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

About Ali Haider

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.